myUpchar प्लस+ सदस्य बनें और करें पूरे परिवार के स्वास्थ्य खर्च पर भारी बचत,केवल Rs 99 में -

Tacrom 0.03% Ointment

खरीदने के लिए पर्चा जरुरी है

दवा उपलब्ध नहीं है

Tacrom 0.03% Ointment

दवा उपलब्ध नहीं है

खरीदने के लिए पर्चा जरुरी है

Tacrolimus साल्ट से बनी दवाएं:

Tacrom के सारे विकल्प देखें

खरीदने के लिए पर्चा जरुरी है

cashback
cashback
क्या आप इस प्रोडक्ट के विक्रेता हैं? हमारे साथ जुड़े
  1. Tacrom، فایدہ، اور استعمال- Tacrom Benefits & Uses in Urdu- Tacrom ke fayede aur istemaal karne ka tariqua
  2. Tacrom ، خوراک، اور کیسے استعمال کریں- Tacrom Dosage & How to Take in Urdu - Tacrom ki khurak aur istemaal karne ka tariqua
  3. Tacrom، مضر اثرات- Tacrom Side Effects in Urdu- Tacrom ke nuksaan or muzir asraat
  4. Tacrom، متعلق انتباہ ( وارننگ)- Tacrom Related Warnings in Urdu- Tacrom se motallique intebah
  5. Tacrom کا دوسری دواؤں کے ساتھ شدید تعامل (انٹریکشن) ہوتا ہے- Severe Interaction of Tacrom with Other Drugs in Urdu- Tacrom ka mandarja zail dawaiyon ke saath muzir asar
  6. Tacrom تضادات ( کونٹرایندیکشن)- Tacrom Contraindications in Urdu- In bimariyon me mubtala hon to Tacrom na khayain ya ahtiyat bartain
  7. Tacrom کے بارے میں عام طور سے پوچھے گئے سوالات- Frequently asked Questions about Tacrom in Urdu- Tacrom ke baare mein aksar pooche jaane waale sawaal
  8. Tacrom کا تعامل (انٹریکشن ) غذا اور شراب کے ساتھ - Tacrom Interactions with Food and Alcohol in Urdu- Tacrom ka ghizaa aur sharab ke saath nuksaan deh asar

Tacrom، فایدہ، اور استعمال - Tacrom Benefits & Uses in Urdu - Tacrom ke fayede aur istemaal karne ka tariqua

Tacrom کا استعمال مندرجہ ذیل بیماریوں کیلئے کرتے ہیں-

  1. एटॉपिक डर्मेटाइटिस
  2. लिवर ट्रांसप्लांट मुख्य
  3. किडनी ट्रांसप्लांट मुख्य
  4. हृदय प्रत्यारोपण मुख्य

Tacrom ، خوراک، اور کیسے استعمال کریں - Tacrom Dosage & How to Take in Urdu - Tacrom ki khurak aur istemaal karne ka tariqua

عام طور پر یہ خوراک عام بیماریوں میں دیا جاتا ہے- مہربانی کرکے دھیان رکھیں ہر مریض کا معا ملہ الگ ہوتا ہے- اسلئے خوراک، بیماری، استعمال کرنے کے طریقے جیسے منھ کے ذریعہ ،یا سویی کے ذریعہ، نس میں اور مریض کی عمر اور میڈیکل ہسٹری کے بنیاد پر الگ ہو سکتا ہے-

دوائی کی خوراک، بیماری اور عمر کے حساب سے جانیں

दवाई की मात्र देखने के लिए लॉग इन करें

مندرجہ ذیل اجزاء Tacrom میں پاۓ جاتے ہے - Tacrom Active Ingredients in Urdu - Tacrom ke ajzaa

Tacrolimus

Tacrom، مضر اثرات - Tacrom Side Effects in Urdu - Tacrom ke nuksaan or muzir asraat

تحقیق کے بنیاد پر Tacrom کے مندرجہ ذیل مضر اثرات دیکھے گئے ہیں-

  1. सिरदर्द हल्का
  2. Nausea or vomiting
  3. अनिद्रा हल्का
  4. Diarrhoea
  5. Renal Impairment
  6. Tremor
  7. Hailfall
  8. थकान हल्का
  9. डिप्रेशन मध्यम (और पढ़ें - डिप्रेशन के घरेलू उपाय)
  10. शुगर मध्यम (और पढ़ें - शुगर कम करने के घरेलू उपाय)
  11. Itching or burning
  12. Skin redness
  13. Skin irritation
  14. Skin Infection
  15. Hallucinations

Tacrom، متعلق انتباہ ( وارننگ) - Tacrom Related Warnings in Urdu - Tacrom se motallique intebah

کیا Tacrom کا استمعال کرنا حاملہ عورت کیلئے محفوظ ہے؟

بچھہ جننے والی عورتوں پر Tacrom کے مضر ا ثرات ہوسکتے ہیں اگر ايسا ہوا تو باقی کی دوا داکٹر کے مشورا کے بغير نا ليں

मध्यम

کیا Tacrom کا استمعال کرنا محفوظ ہے دودھ پلانے کے دوران؟

دودھ پلانے والی عورتوں پر Tacrom کے مضر اثرات ہو سکتے ہے اگر آپ اسکے مضر اثرات کو محسوس کرتے ہے تو دوا کو لینا فوری طور پر بند کر دیں اور ڈاکٹر جب کہیں تب ہی اسکو دوبارہ لیں

मध्यम

Tacrom کا گردہ پر کیا اثر ہے؟

گردہ پر Tacrom کوکھا نے کے بعد کے بعد مضر اثرات محسوس ہو سکتے ہیں آپکو بھی دوا سے کوئی مضر اثر محسوس ہو تو دوا نا لیں، اور اسبارے میں ڈاکٹر سے پوچھیں

मध्यम

Tacrom کا جگر پر کیا اثر ہے؟

جگر پر Tacrom کا برا اثر ہو سکتا ہے، نقصان دہ اثر محسوس کرنے پر آپ دوا کو نا لیں، اور لینے سے پہلے ڈاکٹر سے اسکی جانکاری لیں

मध्यम

Tacrom کا دل پر کیا اثر ہے؟

دل پر Tacrom کے انجام بیحد نقصان دہ ہوتے ہیں، یہ دوا لینے سے پہلے ڈاکٹر سے بات کریں

गंभीर

Tacrom کا دوسری دواؤں کے ساتھ شدید تعامل (انٹریکشن) ہوتا ہے - Severe Interaction of Tacrom with Other Drugs in Urdu - Tacrom ka mandarja zail dawaiyon ke saath muzir asar

Tacrom کو مندرجہ ذیل دوا کے ساتھ نہیں لینا چاہیے، ورنہ اسکے مضر اثر مریض پر ہو سکتے ہے-

Tacrom تضادات ( کونٹرایندیکشن) - Tacrom Contraindications in Urdu - In bimariyon me mubtala hon to Tacrom na khayain ya ahtiyat bartain

اگر آپ مندرجہ ذیل بیماریوں میں سے کسی کے شکار ہیں تو Tacrom کا استعمال نا کریں جبتک کے آپکے ڈاکٹر آپکو دوا کھانے کو نا کہیں-

  1. संक्रमण
  2. हाई बीपी
  3. हाइपरकलेमिया
  4. टाइप 2 मधुमेह
  5. लिवर रोग
  6. अतिताप

Tacrom کے بارے میں عام طور سے پوچھے گئے سوالات - Frequently asked Questions about Tacrom in Urdu - Tacrom ke baare mein aksar pooche jaane waale sawaal

کیا Tacrom سے عادت یا لت لگ سکتی ہے؟

نہیں Tacrom لینے سے کوئی عادت نہیں پڑتی ہے پھر بھی، ضرورت پڑنے پر ڈاکٹر کی صلاح پرہی Tacrom کا استعمال کریں

نہیں

کیا دوائی کھا کر گاڑی چلانا یا بھاری مشین پرکام کرنا محفوظ ہے؟

ہاں، Tacrom کو لینے کے بعد آپکو چکر یا نیند نہیں آتی ہے، تو آپ گاڑی کو چلانے وو مشین پر کام کرنے کا کام بھی کر سکتے ہے

सुरक्षित

کیا یہ محفوظ ہے؟

ہاں، ڈاکٹر کے کہنے پر آپ Tacrom کو کھا سکتے ہے

हाँ, पर डॉक्टर की सलाह पर

کیا یہ دماغی امراض کا علاج کر سکتا ہے؟

دماغی بیماری میں Tacrom کام نہیں کرتی ہے

نہیں

Tacrom کا تعامل (انٹریکشن ) غذا اور شراب کے ساتھ - Tacrom Interactions with Food and Alcohol in Urdu - Tacrom ka ghizaa aur sharab ke saath nuksaan deh asar

Tacrom اور غذا کے مابین اسکا کیا تعامل ( انٹریکشن) ہے-

تحقیق کے قلّت میں آنکڑے حاصل نہ ہوپانے کی وجہ سے غذا اور Tacrom کو لینے سے ہونے والے مضر اثرات کے بارے میں نہیں بتایا جا سکتا ہے

अज्ञात

Tacrom اور شراب کے مابین اسکا کیا تعامل ( انٹریکشن) ہے-

شراب، دوا کے اثر کوکم کرتی ہے اور Tacrom کے ساتھ یہ کئی طرح کا الٹا اثر بھی دکھاتی ہے اسلئے ڈاکٹر کے ہدایت پر ہی اسکا استعمال کریں

गंभीर
This medicine data has been created by -
Vikas Chauhan
B.Pharma, Pharmacy
3 वर्षों का अनुभव

संदर्भ

  1. US Food and Drug Administration (FDA) [Internet]. Maryland. USA; Package leaflet information for the user; Prograf® (tacrolimus)
  2. KD Tripathi. [link]. Seventh Edition. New Delhi, India: Jaypee Brothers Medical Publishers; 2013: Page No 881
  3. April Hazard Vallerand, Cynthia A. Sanoski. [link]. Sixteenth Edition. Philadelphia, China: F. A. Davis Company; 2019: Page No 1165-1167
डॉक्टर से अपना सवाल पूछें और 10 मिनट में जवाब पाएँ